پیر‬‮   15   اپریل‬‮   2024
پاکستان سے رشتہ کیا     لا الہ الا الله
پاکستان سے رشتہ کیا                    لا الہ الا الله

کسی بھی ملک کو دہشت گردوں کو پناہ گاہیںفراہم نہیں کرنے دیں گے ، قومی سلامتی کمیٹی

       
مناظر: 754 | 2 Jan 2023  

 

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) قومی سلامتی کمیٹی کا کہنا ہےکہ کسی بھی ملک کو دہشت گردوں کو پناہ گاہیں اور سہولتیں فراہم کرنے کی اجازت نہیں دی جائےگی، پاکستان اس سلسلے میں اپنے لوگوں کے تحفظ کے تمام حقوق محفوظ رکھتا ہے۔
اسلام آباد میں وزیراعظم شہباز شریف کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزرا، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی، تینوں سروسز چیفس اور انٹیلی جنس اداروں کے سربراہان نے شرکت کی،کمیٹی کو مجموعی سکیورٹی صورت حال اور خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں دہشت گردی کے حالیہ واقعات پر بریف کیا گیا۔
قومی سلامتی کمیٹی کے اعلامیے میں کہا گیا ہےکہ دہشت گردی سے ریاست کی پوری طاقت سے نمٹیں گے، پاکستان کی سرزمین کے ایک ایک انچ پر ریاست کی مکمل رٹ برقرار رکھی جائےگی، پاکستان کی سلامتی پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا، جامع ‘قومی سلامتی’ معاشی سلامتی کے گردگھومتی ہے،معاشی آزادی کے بغیر ملکی خود مختاری یا وقار دباؤ میں آتا ہے۔
اعلامیے میں کہا گیا ہےکہ قانون نافذ کرنے والے اداروں بالخصوص سی ٹی ڈی کو مطلوبہ صلاحیتوں کے ساتھ جنگ کے معیار تک لایا جائےگا،کسی بھی ملک کودہشت گردوں کو پناہ گاہیں اور سہولتیں فراہم کرنےکی اجازت نہیں دی جائےگی، پاکستان اس سلسلے میں اپنے لوگوں کے تحفظ کے تمام حقوق محفوظ رکھتا ہے۔
اجلاس میں فیصلہ کیا گیاکہ زراعت کی پیداوار اور مینوفیکچرنگ کے شعبے میں اضافے کے لیے توجہ مرکوز کی جائےگی، درآمدات میں توازن لانےکے لیے اقدامات کرنے پربھی اتفاق کیا گیا،کرنسی کی بیرون ملک غیرقانونی منتقلی کی روک تھام کے لیے اقدامات پربھی اتفاق کیا گیا۔
قومی سلامتی کمیٹی کا کہنا ہےکہ عوامی مفاد اور فلاح پر مبنی معاشی پالیسیاں اولین ترجیح رہیں گی، تمام متعلقہ فریقین کی مشاورت سے تیز رفتار معاشی بحالی اور روڈ میپ پر اتفاق رائے پیدا کیا جائے گا۔ اجلاس میں 3 کروڑ 30 لاکھ سیلاب متاثرین کی مشکلات پر بھی غور کیا گیا، اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ متاثرین کی بحالی اور تعمیر نو کے لیے تمام وسائل بروئےکار لائے جائیں گے۔ وزیر خزانہ کی بین الاقوامی مالیاتی اداروں سے بات چیت کی صورتحال پر بریفنگ
وزیر خزانہ نے کمیٹی کو حکومت کے معاشی استحکام کے روڈ میپ کے بارے میں بریف کیا، وزیر خزانہ نے بین الاقوامی مالیاتی اداروں کے ساتھ بات چیت کی صورت حال پر بھی بریف کیا۔
اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ کی قیادت وفاقی اور صوبائی حکومتیں نیشنل ایکشن پلان کے مطابق کریں گی، سماجی و اقتصادی ترقی کو ترجیح دی جائےگی، صوبائی ایپکس کمیٹیوں کو بھرپور طریقے سے بحال کیا جارہا ہے۔